صفحہ اول / دنیا / فائرفائٹرکو مغرب میں قوم ہیرو کی نظر سے دیکھتی ہے

فائرفائٹرکو مغرب میں قوم ہیرو کی نظر سے دیکھتی ہے

فائرفائٹرکو مغرب میں قوم ہیرو کی نظر سے دیکھتی ہے، کسی لڑکی کا خواب ہوتا ہے کہ اسکی شادی کسی فائر فائٹر سے ہو -فوج میں بھرتی ہونا آسان ہے مگر فائر فائٹر بننے کے لیے جو فٹنس اور معیار ہے اس پر پورا اترنا ہر ایک کے بس کی بات نہیں .. اسکولوں میں بچے اس دن کا بے تابی سے انتظار کرتے ہیں جب انکے اسکول میں فائر فائٹر بچوں سے ملنے اور انکے ساتھ تصویر بنوانے آئیں – بچپن سے ذہنوں میں یہ بات ڈالی جاتی ہے کہ یہ ایسے عظیم لوگ ہیں جو:
***لوگوں کی جانیں بچانے آگ میں کود جاتے ہیں
***کبھی ہمت نہیں ہارتے آخری دم تک جان لڑا دیتے ہیں
***یہ سائنسدانوں کی طرح سائنس کا علم رکتھے ہیں، فزکس کیمسٹری، آگ کی اقسام ، کس آگ میں کیا ترکیب آزمانی ہے اسکی مہارت رکھتے ہیں اور بتا سکتے ہیں کہ آگ کیسے لگی یا لگائی گئی
*** لوگ انکو دیکھ کر حوصلہ پاتے ہیں، یہ جلتی آگ میں کھڑکی سے کود کر اندر جاکر کسی کو بچا سکتے ہیں، جلتی کار کے شیشے توڑ کر کسی کو لمحوں میں باہرنکال سکتے ہیں-
***یہ صرف آگ سے نہیں بچاتے، پانی میں گھر جانے والوں، بیماروں اور زخمیوں کی جانیں بچانے والے لوگ بھی ہیں ….
دوسری طرف ہم اپنے فائر فائٹر کو کیا عزت دیتے ہیں؟ انکی کی تعلیم و تربیت ہے، یہاں کیسے بھرتی ہوتی ہے اس پر بھی سوچیں. سیاسی پارٹی کے ورکز کو فائر فائٹر کے طور پر ایڈجسٹ کروائیں گے تو لوگ جلتی عمارتوں سے کود کود کر یا جل کر مرتے نہیں رہیں گے ؟ دنیا بھر میں شہر کی بلدیہ کے بجٹ میں فائر فائٹنگ کو آخر میں نہیں شروع میں رکھا جاتا ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے