صفحہ اول / سیاحت / کوهاله پوائنٹ- سیاحت اور احتیاط

کوهاله پوائنٹ- سیاحت اور احتیاط

تنویر احمد خان کی تحریر 

KohalaBridgeKohala-Picnic-Point-activebiz

سندھ ، پنجاب بلوچستان اور بالخصوص کراچی سے سیاحت کی غرض سے کشمیر گلگت بلتستان اورخیبر کی طرف آنےوالے دوست اپنے هر قریبی اور پیارے کو آگاه کریں کہ

احتیاطی تدابیر- کسی بھی تفریحی مقامات پر جاتے ہوئے اپنائیں

1-  اس طرف کی روڈز، ڈرائیونگ کی مھارت اور سخت ترین احتیاط کی متقاضی هیں

2- کسی بھی ندی نالے یا دریا کے قریب مت جائیں یه پهلے قدم پر هی انتهائی طاقتور موجیں اور خوفناک گھرا ئی رکھتےهیں.اور ان کے قریب سطح یا پتھر اگر گیلے هیں تو شدید پھسلن والے هونے کی وجه سے پلک جھپکنے میں گرا کر بےرحم موجوں کے حوالے کردیتے هیں

3-  یادرهے پلین علاقے کےدوست جو میدانی دریا اور سمندر کے عادی هوتے هیں وه اس غلط فھمی کاجلد شکار هوکر جان سے هاتھ دھو بیٹھتے هیں کہ یه پانی تو تھوڑا سا هے….نظر آنیوالا تھوڑا ساپانی خوفناک طاقت اور رفتار رکھتاهے…آۓروز ایسے واقعات پیش آتے هیں جن سے والدین اور پیارے اپنے عزیزوں کو کھورهے هیں

4-  حالیه کوهاله پوائنٹ پرشرط لگاکردریاعبور کرنے کاچیلنج دینا اور نوجوان کا چیلنج قبول کرکے دریامیں کودجانا…اس بات کی غمازی کرتاهیکه دونوں طرف کے دوستوں نے دریاکو کوئی پنجاب کی عام سی نھرخیال کیا اور اسے دریاکراس کرنیکا چیلنج دیااور ایک قیمتی جان ضائع هوگئی

5-  دوسرا یه بھی که پلین علاقے کےپانی کاماهرترین تیراک بھی دریاۓ نیلم ، جھلم انڈس, کنہار اور دریائےسوات میں تیراکی نهیں کرسکتا..کرنے کی کوشش کرے گاتو نتیجه سو فیصد موت…
دریاکی ایک ایک موج کئی کئی ٹن وزن کی حامل اور طوفان کی سی رفتار رکھتی هے…اس سے جتنادور رهیں گے اسی قدر محفوظ رهیں گے…

6-  کوهاله کےمقامی دوست بتاتے هیں که پوائنٹ پر مهینه میں چار پانچ حادثات لازما هوتے هیں اس حادثے سے کچھ دن قبل ایک نوبیاھتانوجوان اپنی بیوی اور تین بھنوں کے سامنے سیلفی لیتے هوۓ دریا میں گرگیااور پھر کبھی واپس نه لوٹ سکا…اس طرح بہت سارے واقعات اس سیزن میں سامنے آئے ہیں.

آئیے اس پیغام کو پھیلائیں تاکه پهاڑی ندی نالوں اور دریاؤں کےحوالے سےآگاهی دےکر قیمتی جانوں کوبچاسکیں…..

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے