صفحہ اول / پاکستان / قر بانی کا عمل ہر سال سنتِ ابراہیمی ؑ کے اتباع میں کیا جاتا ہے ۔شاہد ہاشمی

قر بانی کا عمل ہر سال سنتِ ابراہیمی ؑ کے اتباع میں کیا جاتا ہے ۔شاہد ہاشمی

ہر صاحبِ نصاب پر واجب ہے اور جانور قر بان کر کے ہی واجب الادا ہو سکتا ہے

گلشنِ معمار میں اجتماع سے خطاب
کراچی 28 اگست 2017 ؁ ء( ہمارا اخبار) قربانی ایک عظیم جذبہ اور بہترین عمل ہے جو ہر سال سنت ابراہیمیؑ کی اتباع میں کیا جاتاہے اسکے لیے اخلاص نیت اور تقویٰ کا ہونا بہت ضروری ہے افسوس آج ایک جانب اس عظیم سنت کو ریاکاری اور نمود ونمائش سے بے روح کیا جارہاہے تو دوسری جانب منفی پروپیگنڈے کے ذریعے قربانی کے بجائے وہ رقم صدقہ کرنے کی ترغیبات دلائی جارہی ہیں،قربانی ہر صاحب نصاب پر واجب ہے جمہور علماء کی رائے میں جانور قربان کرکے ہی یہ واجب الاداہوسکتا ہے اللہ ہمارے چہرے نہیں نیت دیکھتا ہے اسے گوشت اور خون نہیں بلکہ تقو یٰ مطلوب ہے،قربانی سنت ابراہیمی ؑ ہے اور حضرت ابراہیم ؑ کا اسوہ رہتی دنیا تک تمام انسانوں کے لیے مشعل راہ ہے ۔

ان خیالات کا اظہارجماعت اسلامی کی مرکزی شوریٰ کے رکن ،معروف اسکالراور ڈائریکٹر اسلامک ریسرچ اکیڈمی کر اچی (ادارہ معارف اسلامی)شاہد ہاشمی نے جماعت اسلامی زون گلشن معمار کے زیر انتظام چرم قربانی و اجتماعی قربانی مہم کے سلسلے میں منعقد ہ کارکنان کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

اس موقع پرجماعت اسلامی زون گلشن معمار کے امیر رضوان شاہ اور جنرل سیکریٹری ابوالخیر ودیگر ذمہ داران کے علاوہ کارکنان کی بڑی تعداد موجود تھی جبکہ پروگرام میں حلقہ جات کے ناظمین نے اپنے حلقہ جات کی رپورٹ بھی پیش کی ۔ جماعت اسلامی نے انسانیت کی خدمت کا آغاز 1950 ؁ء میں مٹھی بھر آٹا جمع کر نے کی اسکیم شروع کر کے کیا تھا ۔ قربانی کی کھالوں کا ضیاع اور ان کے غلط استعمال کو دیکھ کر قربانی کی کھالوں کو جمع کرنے کا سلسلہ شروع کیا گیا ان کھالوں سے حاصل شدہ رقوم عوام کی فلاح و بہبود میں خرچ کی جاتی ہیں، پاکستان میں چرم قربانی سے حاصل ہونے والی رقم کو فلاحی کاموں میں خرچ کرنے کی روایت بھی جماعت اسلامی نے ڈالی تھی دیگر ہسپتالوں میں ہونے والے مہنگے ترین آپریشن بھی الخدمت کے ہسپتالوں میں فری یا انتہائی کم لاگت پرکیے جاتے ہیں اس کیساتھ الخدمت ڈسپنسریوں ،ایمبولینسوں،میت گاڑیوں کی فراہمی اورنادار طلبہ کی تعلیم،وظائف اور یتیموں کی کفالت کا سلسلہ بھی جاری رکھے ہوئے ہے ۔

جماعت اسلامی و الخدمت کے رضا کار ہر سال ذی الحجہ کے مہینے میں چرم قربانی جمع کرنے کے ساتھ ساتھ اجتماعی قربانی مہم کے ساتھ عوام کی سہولت کے لیے ملک کے ہر حصے میں سفید پوش افراد کی سہولت کے لیے آسان اجتماعی قربانی کا اہتمام بھی کرتے ہیں۔ جماعت اسلامی نے شعبہ الخدمت کے تحت ’’خدمت دیانت کے ساتھ ‘‘ سلوگن کے ساتھ مثالی عملی نمونہ پیش کیا ہے۔ سالہا سال سے جماعت اسلامی پاکستان ہر نازک موڑ پر عوام کے ساتھ کھڑی ہے اور الخدمت کے کاموں کو نہ صرف اندرون بلکہ بیرون ملک میں بھی قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے ۔کارکنان اپنے تین روز اللہ کی راہ میں قربان کرنے کا عزم کر لیں اس لیے ضرورت اس بات کی ہے کہ اللہ کی راہ میں سیدنا ابراہیم ؑ کی عظیم قربانی اور اطاعت رب کی اعلیٰ ترین مثال کو سامنے رکھتے ہوئے آپ بھی رب کی رضا جوئی کی خاطراپنے آپ کو اللہ کے کاموں میں کھپا دیں جو اللہ کے کاموں میں لگ جاتا ہے اللہ اس کے کاموں میں لگ جاتاہے جماعت اسلامی کے کارکنان خدمت کے جذبے سے سرشار ہوکرچرم قربانی و اجتماعی قربانی مہم کے لیے گھر گھر رابطوں کے سلسلے کومزید بہتر اور تیز تر کردیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے